daasu dam

چینی کمپنی نے داسو ڈیم پر کام بند کر دیا، پاکستانی ملازمین کو بھی برخاست کر دیا

14 جولائی کے واقعے کے باعث کام جاری نہیں رکھ سکتے،تمام ملازمین کو گریجویٹیی اور تنخواہ ادا کی جائے گی۔ چائنا گیزوبا گروپ کمپنی کا خط

اسلام آباد :: چینی کمپنی نے داسو ڈیم پر کام بند کر دیا۔جنگ اخبار کی رپورٹ کے مطابق کوہستان میں چینی انجینئروں کی ہلاکت کے بعد چینی کمپنی ’چائنا گیزوبا گروپ کمپنی ‘ نے داسو ڈیم پر کام بند کر دیا ہے۔جبکہ چینی کمپنی نے تمام پاکستانی ملازمین کو بھی برخاست کر دیا ہے۔کمپنی کی جانب سے جاری کیے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ 14 جولائی کے واقعے کے باعث کام جاری نہیں رکھ سکتے۔

خط میں چائنا گیزوبا گروپ کمپنی کایہ بھی کہنا ہے کہ تمام ملازمین کو گریجویٹیی اور تنخواہ ادا کی جائے گی۔داسو ڈیم کے پراجیکٹ ڈائریکٹر انوار الحق نے کمپنی کے کام بند کردینے اور چینی کمپنی کے خط کی بھی تصدیق کی۔اس حوالے سے انہوں نے کہا کہ جوں ہی سیکیورٹی کے معاملات درست ہوں گے،کام شروع ہو جائے گا۔

خیال رہے کہ داسو ڈیم میں کام کرنے والے کمپنی کی بس حادثے کا شکار ہوگئی تھی جس کے نتیجے میں 13 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

واقعے کے بعد چین نے بھی تحقیقات میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا تھا،اس ضمن میں چینی باشندوں کی بس کوپیش آنے والے واقعے کی تحقیقات کے لیے چین کی اعلیٰ سطحی تحقیقاتی ٹیم اسلام آباد پہنچ گئی ہے۔ سفارتی ذرائع کے مطابق چینی ٹیم آئندہ روز جائے وقوعہ جائیگی،جہاں انہیں پاکستانی سیکیورٹی حکام بریفنگ دیں گے۔ خیال رہے کہ دو روز قبل داسو میں بس کھائی میں گِرنے سے 9 چینی اور4 پاکستانی جاں بحق ہوئے تھے جن میں دو ایف سی جوان اور دو مزدور شامل تھے۔

ضرور پڑھیں  مولانا فضل الرحمن کا سافٹ وئیر اپ ڈیٹ ہو گیا

اس حوالے سے گذشتہ روز وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ داسو واقعے پر ابتدائی تحقیق نے دھماکا خیزمواد کی موجودگی کنفرم کی ہے، واقعے میں دہشت گردی کا پہلو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا۔پاکستان اور چین کے درمیان اعلیٰ سطح پر واقعے کے حوالے سے رابطے جاری ہیں اور تحقیقات سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال بھی جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں