پینڈورا پیپرز میں شامل 700 پاکستانیوں کے خلاف باضابطہ تحقیقات شروع

اسلام آباد : پینڈورا پیپرز میں شامل 700 پاکستانیوں کے خلاف باضابطہ تحقیقات شروع کردی گئیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق پینڈورا پیپرز تحقیقات کو 2 حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے ، جس کے تحت موجودہ یا سابق پبلک آفس ہولڈرز اور دیگر کاروباری شخصیات کے خلاف الگ الگ تحقیقات ہوں گی ، اس مقصد کے لیے ملک بھر کے ریونیو ڈیپارٹمنٹ اور نادرا سے مدد لی جائے گی ، تحقیقات کی روشنی میں رپورٹس ایف آئی اے، نیب اور ایف بی آر کو فراہم کی جائیں گی تاکہ پاکستانی قوانین کے تحت قانونی کاروائی ہوسکے۔

معلوم ہوا ہے کہ تحقیقات کے پہلے مرحلے میں پینڈورا پیپرز میں سامنے آنے والے تمام پاکستانیوں کے ملک میں کاروبار، بینک اکاؤنٹس اور جائیدادوں کی تفصیلات جمع کی جارہی ہیں ، ان افراد کے روزانہ کے اخراجات ، بچوں کی تعلیم اور شادیوں سمیت دیگر تفصیلات بھی اکھٹی کی جائیں گی ، بتایا گیا ہے کہ آف شور کمپنیوں میں سرمایہ کاری کرنے والے پاکستانیوں کے بیرون ممالک دوروں، علاج معالجہ، شاپنگ اور فضائی سفر کے دوران کیے گے دیگر اخراجات کی تفصیلات بھی اکھٹی کی جارہی ہیں، ان کے سرکاری و نجی بینکوں کے اکاؤنٹس، موبائل نمبرز کا ڈیٹا، ان کے ٹریول ایجنٹس اور پرائیوٹ ہوٹلز کی بکنگ کی تفصیلات بھی اکھٹی کی جائیں گی۔

ضرور پڑھیں  ملک بھرمیں عید تعطیلات کے دوران پبلک ٹرانسپورٹ مکمل بند رکھنے کا فیصلہ

اپنا تبصرہ بھیجیں