فضل الرحمٰن، جہانگیر ترین، پرویز خٹک الیکشن ہار گئے، نواز، شہباز، مریم کامیاب

اسلام آباد: عام انتخابات میں مولانا فضل الرحمٰن، جہانگیر ترین اور پرویز خٹک ہار گئے جب کہ نواز شریف، شہباز شریف اور مریم نواز نے کامیابی حاصل کرلی۔

الیکشن 2024ء کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف، پارٹی کے صدر میاں شہباز شریف اور سینئر نائب صدر مریم نواز قومی اسمبلی کی نشستیں جیتنے میں کامیاب ہو گئے جب کہ جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن، استحکام پاکستان پارٹی کے سربراہ جہانگیر ترین اور پی ٹی آئی پارلیمنٹرین کے رہنما پرویز خٹک کو شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

نواز شریف جیت گئے، یاسمین راشد کو شکست
لاہور میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 130 پر سابق وزیراعظم اور قائد مسلم لیگ ن میاں نواز شریف نے پاکستان تحریک انصاف کی حمایت یافتہ امیدوار سابق صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کو سخت مقابلے کے بعد شکست دی۔ نواز شریف نے ایک لاکھ 71 ہزار 24 ووٹ حاصل کیے جب کہ ان کی مدمقابل یاسمین راشد نے ایک لاکھ 15 ہزار 43 ووٹ لیے اور دوسرے نمبر پر رہیں۔

شہباز شریف قومی اسمبلی کی نشست پر کامیاب

دوسری جانب مسلم لیگ ن کے صدر اور سابق وزیراعظم میاں شہباز شریف بھی قومی اسمبلی کی نشست جیت گئے۔ انہوں نے حلقہ این اے 123 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق 63 ہزار 953 ووٹ لے کر نشست پر کامیابی حاصل کی جب کہ ان کے مدمقابل تحریک انصاف کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار افضال عظیم پاہٹ 48 ہزار 486 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

مریم نواز کی قومی و صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر فتح

علاوہ ازیں مسلم لیگ کی سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر مریم نواز اپنی قومی اور صوبائی اسمبلی کی دونوں نشستوں پر کامیاب ہو گئیں۔ انہوں نے حلقہ این اے 119 لاہور پر 83 ہزار 855 ووٹ حاصل کیے جب کہ ان کے مدمقابل آزاد امیدوار شہزاد فاروق 68 ہزار 376 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

مولانا فضل الرحمن اپنے آبائی حلقے سے ہار گئے

الیکشن 2024ء میں اپنے آبائی حلقے سے انتخابی میدان میں اترنے والے جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمن ڈیرہ اسماعیل خان میں علی امین گنڈا پور سے مقابلے میں ہار گئے۔ حلقہ این اے 44 ڈی آئی خان کے تمام 358 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق علی امین گنڈا پور بہ حیثیت آزاد امیدوار 92 ہزار 612 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جب کہ مولانا فضل الرحمٰن 59 ہزار 364 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پررہے۔

جہانگیر ترین دونوں حلقوں سے ہار گئے

استحکام پاکستان پارٹی (آئی پی پی) کے سربراہ جہانگیر ترین قومی اسمبلی کی دونوں نشستوں (لودھراں اور ملتان) سے ہار گئے۔ ملتان میں ان کے مدمقابل پاکستان تحریک انصاف کے حمایت یافتہ امیدوار عامر ڈوگر قومی اسمبلی کی نشست پر کامیاب ہو گئے۔ اُدھر لودھراں میں پاکستان مسلم لیگ ن کے صدیق خان بلوچ ایک لاکھ 17 ہزار 671 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جب کہ ان کے مقابلے میں جہانگیر ترین نے 71 ہزار 128 ووٹ حاصل کیے۔

پرویز خٹک کو قومی و صوبائی کی دونوں نشستوں پر شکست

خیبر پختونخوا کے سابق وزیراعلیٰ اور پی ٹی آئی پارلیمنٹرین کے سربراہ پرویز خٹک کو قومی اور صوبائی اسمبلی کی دونوں نشستوں پر شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ علاوہ ازیں سابق وزیراعلیٰ پختونخوا محمود خان بھی الیکشن میں کامیاب نہیں ہو سکے۔پرویز خٹک کو پی پی 87 نوشہرہ میں آزاد امیدوار خلیق الرحمٰن نے شکست دی۔پرویز خٹک نے 18 ہزار 176 ووٹ حاصل کیے جب کہ ان کے مدمقابل امیدوار خلیق الرحمٰن 44 ہزار 762 ووٹ حاصل کر سکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں