آئندہ بجٹ میں سولر پی وی پینل،پلانٹ، مشینری اور خام مال پر ڈیوٹی ختم ہونے کا امکان

لاہور: حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں سولر پی وی پینلز کی تیاری میں استعمال ہونے والے پلانٹ، مشینری، آلات اور خام مال کی درآمد پر ڈیوٹی ختم ہونے کا امکان ہے ۔میڈیا رپورٹ میں منیجنگ ڈائریکٹر پرائیویٹ پاور انفراسٹرکچر بورڈ کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ کسٹمز ایکٹ 1969 کا پانچواں شیڈول سولر پی وی سسٹمز کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی سے استثنیٰ فراہم کرتا ہے جس میں پی وی ماڈیول، چارج کنٹرولرز، انورٹرز، بیٹریاں وغیرہ شامل ہیں۔
دوسری طرف مقامی سولر پی وی پینل مینوفیکچرنگ/اسمبلی کے لیے مشینری، آلات اور اسپیئرز کی درآمد میں مصروف صنعتی اداروں کو ضمنی سیلز ٹیکس اور ایڈوانس انکم ٹیکس کے علاوہ کسٹم ڈیوٹی کی مختلف شرحوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اس عدم مساوات سے اس طرح کے آلات کی مقامی مینوفیکچرنگ سے وابستہ آپریشنل اخراجات میں نمایاں اضافہ ہوتا ہے جس کے نتیجے میں درآمد شدہ اور مقامی طور پر تیار کردہ آلات کے مابین ایک ناہموار مسابقتی منظر نامہ پیدا ہوتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ درآمد ی اور مقامی طور پر تیار کردہ آلات کے درمیان منصفانہ اور مسابقتی ماحول قائم کرنے کے مقصد سے پی پی آئی بی نے سختی سے سفارش کی ہے کہ سولر پی وی پینلز اور متعلقہ آلات کی مینوفیکچرنگ / اسمبلنگ کے عمل میں استعمال ہونے والے تمام پلانٹ ، مشینری ، آلات ، اختتامی خام مال اور متعلقہ آلات کو ڈیوٹیوں اور ٹیکسوں سے مستثنیٰ قرار دیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں