200 یونٹ تک کے صارفین کیلئے بجلی مہنگی کرنے کا فیصلہ واپس

اسلام آباد : وفاقی حکومت کی جانب سے 200 یونٹ تک کے صارفین کیلئے بجلی مہنگی کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وفاقی کابینہ نے 200 یونٹس تک بجلی استعمال کرنے والے صارفین کے لیے فی یونٹ قیمت میں اضافہ واپس لینے کی منظوری دے دی ہے، اس سلسلے میں وزیراعظم شہباز شریف نے وفاقی کابینہ سے ہنگامی بنیادوں پر سرکولیشن سمری کی منظوری لی۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ قیمت میں اضافے کا فیصلہ واپس لینے کے فیصلے کے تحت جولائی تا ستمبر 2024ء کے لیے ماہانہ 200 یونٹ والے صارفین کو ریلیف دیا جائے گا اور وفاقی حکومت ٹیرف پر ریلیف دینے کے لیے تقریباً 50 ارب روپے سبسڈی دے گی، وزیراعظم شہباز شریف کی جانب سے آج اس پیکج کا اعلان کیے جانے کا امکان ہے۔
بتایا جارہا ہے کہ وفاقی کابینہ نے گھریلو صارفین کے لیے بنیادی ٹیرف 48 روپے 84 پیسے تک مقرر کرنے کی منظوری دی ہے، جب کہ مجموعی طور پر فی یونٹ بنیادی ٹیرف میں 3 روپے 95 پیسے سے 7 روپے 12 پیسے تک اضافہ منظور کیا گیا ، نان پروٹیکٹیڈ گھریلو صارفین کے لیے 1 سے 100 یونٹ تک بجلی استعمال کرنے پر ٹیرف میں 7 روپے 11 پیسے اضافے کے بعد نئی قیمت 23 روپے 59 پیسے فی یونٹ ہوگی، اسی زمرے میں شامل صارفین کے لیے ماہانہ 101 سے 200 یونٹ چلنے پر بنیادی ٹیرف 7 روپے 12 پیسے اضافے کے بعد 30 روپے07 پیسے مقرر کیا گیا ، 201 سے 300 یونٹ استعمال کرنے والے نان پروٹیکٹڈ صارفین کیلئے بنیادی ٹیرف کی مد میں 7 روپے 12 پیسے اضافہ منظور ہوا ہے اور نئی قیمت 34 روپے 26 پیسے ہوگی۔

دستاویز سے معلوم ہوا کہ ماہانہ 301 سے 400 یونٹ پر بنیادی ٹیرف 7 روپے 02 پیسے بڑھا ہے اور نئی قیمت 39 روپے 15 پیسے مقرر کی گئی ہے، ماہانہ 401 سے 500 یونٹ پر بنیادی ٹیرف کا اضافہ 6 روپے 12 پیسے ہوا ہے اور نئی قیمت 41 روپے 36 پیسے ہوگی، ماہانہ 501 سے 600 یونٹ استعمال کرنے والوں کے لیے ٹیرف 6روپے 12پیسے بڑھ چکا ہے اور نئی قیمت 42 روپے 78 پیسے مقرر کی گئی ہے، ماہانہ 601 سے 700 یونٹ کے بنیادی ٹیرف میں بھی 6 روپے 12 پیسے اضافہ ہوا ہے جس کے بعد فی یونٹ قیمت 43 روپے 92 پیسے کردی گئی ہے، اسی طرح یونٹ سے زیادہ استعمال والے صارفین کے لیے بھی ٹیرف میں 6 روپے 12 پیسے اضافہ منظور کیا گیا ہے، ان کے لیے نئی قیمت 48 روپے 84 پیسے فی یونٹ یوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں